95

پاکستان میں فوجی کارروائی بارے رپورٹیں بے بنیاد ہیں، امریکہ

واشنگٹن – امریکہ نے پاکستان میں فوجی کارروائی بارے میڈیا رپورٹوں کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ واشنگٹن نئی حکمت عملی کے تحت مختلف آپریشنز میں اسلام آباد کے تعاون اور معاؤنت کا خواہاں ہے ۔ غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق امریکی لیفٹیننٹ جنرل کینتھ ایف میکنزئی نے صحافیوں کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ ہم پاکستان کے اندر کوئی فوجی کارروائی شروع نہیں کر رہے بلکہ جنوبی ایشیا کے بارے نئی امریکی پالیسی وراثتی طور پر علاقائی ہے اور پاکستان جغرافیائی طور پر مختلف حوالوں سے انتہائی اہمیت کا حامل ہے اور یہی وجہ ہے کہ یہ ملک ہماری حکمت عملی کا بنیادی حصہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ متعدد اقدامات کے ذریعے ہم افغانستان میں آپریشنز کے لئے پاکستانی تعاون اور معاونت کے خواہاں ہیں دریں اثناء پینٹاگون کی سربراہ ترجمان ڈینا وائیٹ نے بھی صحافیوں کے ساتھ بات چیت کرتے ہ وئے کہا کہ نئی جنوبی ایشیاء حکمت عملی کے تحت پاکستان کے پاس دہشتگردی کے خلاف جنگ میں اہم اتحادی بننے کا ایک اور موقع ہے انہوں نے کہا کہ پاکستان جہاں دہشتگردی سے متاثر ملک ہے وہیں ملک نے دہشتگردوں کی معاونت بھی کی اور اب ہم چاہتے ہیں کہ پاکستان دہشتگردی کے خلاف جنگ میں وہ اقدامات اٹھائے جو حقیقت میں اس کی ضرورت ہیں انہوں نے اس تاثر کو بھی غلط قرار دیا کہ کابل میں حالیہ حملوں اور پاکستان کے لئے امریکی امداد کی بندش کا آپس میں کوئی تعلق ہے انہوں نے کہا کہ طالبان مایوس ہیں اور وہ اسی لئے معصوم شہریوں کو بڑے پیمانے پر نشانہ بنائے جا رہے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں