100 Days Agenda lahore 71

احتساب سے پیچھے نہیں ہٹ سکتے- باقی تمام باتیں ماننے کو تیار ہیں، وزیراعظم

احتساب سے پیچھے نہیں ہٹ سکتے- باقی تمام باتیں ماننے کو تیار ہیں، وزیراعظم

لاہور(اردو سکوپ) پنجاب حکومت کی 100 روزہ کارکردگی کے حوالے سے لاہور میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ اپوزیشن کی تمام باتیں ماننے کو تیار ہیں لیکن احتساب سے پیچھے نہیں ہٹیں گے، یہ نہیں ہوسکتا کہ ہم احتساب سے پیچھے ہٹ جائیں کیونکہ نئی نسل کا مستقبل کرپشن فری پاکستان سے جڑا ہے جب تک کرپشن ختم نہیں کی گئی تو ملک کے مستقبل کو خطرات لاحق رہیں گے۔
وزیراعظم نے کہا کہ لوگ کہتے ہیں آپ پرانی حکومت کی باتیں کرتے رہتے ہیں، یہ بتانا بہت ضروری ہے تاکہ موازنہ ہو سکے کہ سابق حکومت نے کیا کیا ہے، پچھلی حکومت نے جنوبی پنجاب کا ڈھائی سوارب روپیہ وہاں خرچ نہیں ہوا، جنوبی پنجاب اور بلوچستان میں انصاف کے تقاضے پورے نہیں کیے گئے، 100 ارب روپے پروویڈنٹ فنڈ ہضم کرلیا اور محرومیوں کی وجہ سے بلوچستان میں انتشار ہوا

مشرقی پاکستان کے لوگ بار بار کہتے رہے کہ ہمیں انصاف نہیں مل رہا، پھر حقوق کی بات ہوئی اور بڑھتے بڑھتے بات علیحدگی تک پہنچ گئی،جب انصاف نہ مل رہا ہو تو لوگ الگ ہونے کی طرف جاتے ہیں تاہم ہماری پنجاب حکومت نےایک فیصلہ کیاہےکہ علاقوں اورشہروں میں منصفانہ تقسیم ہوگی۔

پنجاب کا آدھا بجٹ لاہور پر خرچ کردیا گیا تھا،یہ شہر تو ٹھیک ہوگیا لیکن دیگر مسائل بڑھ گئے، یہاں ہریالی بھی کم کردی گئی ہے اور جس کی وجہ سے آلودگی بڑھ گئی ہے جس سے آنے والے دنوں میں چھوٹے بچے اور بزرگ متاثرہوسکتے ہیں۔

وزیر اعظم نے مزید کہا کہ پاکستان مشکل وقت سے نکل گیا ہےاور میں آپ لوگوں کو یقین دلاتا ہوں کہ ہم سب مل کر کام کریں گے ، صنعت کے لیے ماحول درست کریں گے، صنعتوں کو گیس اور بجلی سستی ملے گی، جائز طریقے سے پیسہ بنانے سے ملک کا فائدہ ہوتا ہے-

سرمایہ کاروں کی دلچسپی تب ہی بڑھے گی جب وہ پیسا بنائیں گے، مہاتیر محمد نے سرمایہ کاروں کو دولت بنانے کا موقع دیا، یو اے ای کے شیخ محمد نے بھی ایسا ہی کیا، اگر منافع بنتا ہے تو مزید لوگ آ کر سرمایہ کاری کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں