Zainab Case JIT Report Supreme Court Not Satisfied 254

زینب کے آخری ہوم ورک نے ہر آنکھ اشکبار کردی

قصور – گزشتہ روز پنجاب کے علاقے قصور میں ننھی معصوم زینب کے ساتھ کی جانے والی زیادتی پر سارا قصور شہر سوگوار ہے وہی پر زینب کا آخری ہوم ورک دیکھ کر ہر آنکھ اشک بار ہو گئی۔

ننھی زینب کے لکھے گئے آخری الفاظ نے ہر کسی کو سوچنے پر مجبور کر دیا ،ننھی زینب کی کتابیں اور کاپیاں اسی طرح سے اس کے اسکول بیگ میں موجود تھی جن پر 4 جنوری تک کا ہوم ورک موجود ہے اور یہ وہی روز ہے جب زینب کو اغوا کیا گیا اور پھر اس کی بعد زینب کبھی بھی گھر واپس نہیں آ سکی۔

زینب کی کاپیوں پر لکھی تحریر کچھ یوں ہے کہ میں ایک لڑکی ہوں ،میرا نام زینب ہے ،میرے والد کا نام امین ہے، میری عمر سات سال ہے ،میں قصور میں رہتی ہوں ،میں الفاروق اسکول میں پڑھتی ہوں، مجھے آم بہت پسند ہیں زینب کے تحریر کردہ یہ جملے اب بھی موجود ہیں جو ہمیں جھنجھوڑ جنجھوڑ کر یہ بتاتے رہیں گے زینب ایک پاکستانی بچی تھی جس کی معصومیت، اس کے بچپن کو ہمارے ہی معاشرے کے ایک درندے نے چھین لیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں